Pakistan News

حیدرآباد یونیورسٹی کے قیام کی قرارداد منظور

کراچی : پاکستان کے جنوبی صوبے سندھ کے قانون ساز ادارے یعنی سندہ اسمبلی میں حیدرآباد میں یونیورسٹی بنانے کی قرارداد اتفاق رائے سے منظور کر لی گئی ۔

بدھ کے روز سندھ اسمبلی کے اجلاس میں صوبے کے دوسرے بڑے شہرحیدرآباد میں یونیورسٹی کے قیام کے لیے قرارداد پیپلز پارٹی کی رکن فرحین مغل اورمتحدہ قومی مومنٹ کے ارکان اسمبلی وسیم احمد اورمعین پیرزادہ  کی جانب سے پیش گئی۔

جس کے بعد ایوان میں موجود ارکان نے متفقہ طور پر قرارداد کی  حمایت کرتے ہوئے اسے منظور کر لیا۔

یاد رہے کہ سندہ کے صوبائی وزیر تعلیم پیر مظہر الحق کی جانب سے حیدرآباد  میں یونیورسٹی بنانے کے حوالے سے ایک متنازعہ بیان سامنے آیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ حیدرآباد میں کوئی یونیورسٹی نہیں بنانے دیں گے جس پر متحدہ قومی مومنٹ نے شدیداحتجاج کیا تھا اور یونیورسٹی کے قیام کا بل جلد اسمبلی میں پیش کرنے کا کہا تھا۔

آزادبرطانوی نیوزویب سائٹ دی نیوزٹرائب کے نمائندہ حیدرآبادکے مطابق سندھ کے دوسرے بڑے شہرمیں یونیورسٹی کے قیام کے لئے جماعت اسلامی کی جانب سے گزشتہ کئی مہینوں سے مہم چلائی جا رہی تھی۔اندرون سندھ کے دانشوررانہ حلقوں سمیت متعددعلمی شخصیات کی جانب سے بھی اس مطالبہ کی حمایت کی گئی تھی۔

وزیرتعلیم سندھ کے متعلق ماضی میں یہ اطلاعات بھی سامنے آئی تھیں کہ انہوں نے حیدرآبادمیں یونیورسٹی کے قیام کے متعلق وزیراعظم پاکستان کو اس وقت اعلان کرنے سے منع کر دیاتھا جب وہ سندھ یونیورسٹی جامشوروکی جانب سے ڈاکٹریٹ کی ڈگری دئے جانے کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے

Most Popular

To Top